امرتسر دھماکے میں کس کا ہاتھ ہے معلوم ہوگیا

0 15

امرتسر:19نومبر ۔(ایجنسیز)پنجاب کے امرتسرواقع نرنکاری سماگم میں ہوئے بم دھماکے میں نیشنل انویسٹی گیشن ایجنسی (این آئی اے) کی جانچ چل رہی ہے۔ پنجاب پولیس کے ذرائع کے مطابق حملے کے پیچھے خالصتانی حامیوں کا ہاتھ ہے، جنہوں نے مقامی لڑکوں کوبہکا کراس واردات کو انجام دیا، ان میں دہشت گرد ہرمیت سنگھ پی ایچ ڈی کا نام بھی شامل ہے۔تقریباً 40 سال کا ہرمیت پی ایچ ڈی پاکستان میں بیٹھا ایسا خالصتانی دہشت گرد ہے، جوپنجاب میں پھرسے دہشت گردی پھیلانے کے لئے پوری طاقت لگا رہا ہے۔ پاکستانی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی کی شہہ پرکشمیرکی دہشت گرد تنظیموں کے ساتھ پاکستان میں چھپاکربیٹھے خالصتانی دہشت گردوں نے اس دھماکے کی سازش رچی تھی۔واضح رہے کہ راجاسانسی کے پاس گاوں ادلی وال واقع نرنکاری بھون میں اتوارکو سماگم کے دوران بم دھماکہ ہوا تھا، اس میں تین لوگوں کی موقع پرموت ہوگئی جبکہ 22 سے زیادہ لوگ زخمی ہوئے ہیں۔ سیکورٹی ایجنسیوں کے مطابق پنجاب میں خالصتانی دہشت گرد ہرمندرسنگھ منٹو کی موت کے بعد آئی ایس آئی نے پی ایچ ڈی کوپنجاب کا ماحول خراب کرنے کی ذمہ داری سونپی ہے۔ پی ایچ ڈی امرتسرکے چھیہرٹا کا باشندہ ہے۔ خالصتان لہرسے منسلک نوجوان اس کے ساتھ ہیں۔اس وقت پاکستان میں سرگرم دہشت گرد تنظیم کشمیرکے دہشت گردوں اور پنجاب میں انتہا پسند وں کے ساتھ مل کرکام کررہے ہیں۔ واضح رہے کہ پنجاب میں وانٹیڈ دہشت گرد ودھاوا سنگھ ببر، پرم جیت سنگھ پنجواڑ، ہرمیت سنگھ پی ایچ ڈی، لکھبیرسنگھ روڈے پاکستان میں پناہ لے کربیٹھے ہیں، انہیں آئی ایس آئی شیلٹرکررہی ہے۔ بتایا جارہا ہے کہ اس حملے کے لئے بیرون ممالک سے فنڈنگ ہوئی ہے، جس کی مدد سے ہی آئی ایس آئی کے سلیپرسیل نے مقامی لڑکوں کو ہینڈ گرینیڈ مہیا کرائی گئی۔