الہ آباد کا نام "پریاگ راج” کرنے پر کانگریس کا سخت اعتراض

0 17

لکھنؤ۔۔۔۔ وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ کی جانب سے الٰہ آباد کا نام تبدیل کر کے پریاگ راج رکھے جانے کے معاملے پر کانگریس نے کہا کہ تہذیب و روایات اور تاریخی اہمیت کا حامل مشہور و معروف اور بے شمار خوبیوں سے مالا مال اس شہر کا نام تبدیل کرنے سے اس کی شناخت متاثر ہوگی۔

ریاستی کانگریس کے ترجمان اونکار ناتھ سنگھ نے اتوار کو جاری ایک بیان میں کہا کہ یوگی آدتیہ ناتھ کو یہ معلوم ہونا چاہیے کہ پہلے سے ہی کمبھ کا انعقاد پریاگ کے علاقے میں ہوتا ہے۔ یہ علاقہ تقریباً 20 سے 22 کلو میٹر رقبے پرپھیلا ہوا ہے۔ حکومت پریاگ راج کا اعلان کرنا چاہتی ہے تو پھر جس طرح سے الٰہ آباد کے بعض حصوں کو علیحدہ کر کے کوشامبی ضلع بنایا گیا ہے، اسی طرح سے کچھ حصے الگ کر کے پریاگ کوعلیحدہ ضلع بنایا جا سکتا ہے لیکن الٰہ آباد کے نام کو ختم کرنا تحریک آزادی کی تاریخ کے ساتھ کھلواڑکے مترادف ہوگا جسے ریاست اور ملک کی عوام قبول نہیں کریں گے۔سنگھ نے کہا کہ اگر الٰہ آباد کا نام پریاگ رکھا جاتا ہے تو الٰہ آباد یونیورسٹی کا نام بھی پریاگ یونیورسٹی ہوگا۔ اس صورتحال میں عالمی شہرت یافتہ یونیورسٹی اپنی شناخت کھو دیگی اور وہاں کے فارغ ہونیوالے طلبا اور اسکالرز کووہ مقام نہیں مل پائے گا جو الٰہ آباد یونیورسٹی کے نام سے حاصل ہے۔انہوں نے کہا کہ الٰہ آباد کا امرود مشہور ہے اور الٰہ آبادی امرود کے نام سے باہر کے بازاروں میں فروخت کیا جاتا ہے، ایسے میں جب الٰہ آباد ہی نہیں رہے گا تو اس کا برانڈ تو متاثر ہوگا ہی اور وزیر اعلیٰ کی ون انڈسٹری ون پروڈکٹ کی اسکیم بھی اس سے متاثر ہوگی۔ علاوہ ازیں دیگر تمام معاملات متاثر ہونگے اور دشواریوں کا سامنا کرنا پڑیگا۔

اس معاملے پر بات کرتے ہوئے، کانگریس کے ترجمان اونکار سنگھ نے کہا کہ الہ آباد کے نام کو تبدیل کرنے سے اس سے منسلک تاریخ بھی متاثر ہوگی.

کانگریس کی طرف سے دیئے جانے والے دلائل

اونکار سنگھ نے بتایا کہ آزادی کی لڑائی کے دوران الہ آباد انسپریشن کے اہم مراکز میں سے ایک تھا. انہوں نے کہا کہ کانگریس جنرل اسمبلی یہاں 1888، 1892 اور 1910 میں منعقد ہوئی. اس شہر سے ملک کا پہلا وزیر اعظم ملا. اس کے علاوہ، اگر الہ آباد کا نام بدل گیا تو پھر الہ آباد یونیورسٹی اپنی شناخت کھو جائے گی.

بی جے پی نے کیا کہا؟

دوسری جانب بی جے پی نے یہ فیصلہ کا خیرمقدم کرتے ہوئے یوگی حکومت کو مبارکباد دی ہے. بی جے پی کے ترجمان منوج مشرا نے کہا کہ یہ اعلان لاکھوں لوگوں کی جذبات کو ذہن میں رکھتے ہوئے کیا گیاہے. انہوں نے کہا، ‘اکبر کی نشانی کو مٹاتے ہوئے پورانیک نام دینا اچھا ہے’.

وزیراعلی یوگی نے اعلان کیا تھا

دراصل، یو پی کے وزیراعلی یوگی ادیتہ ناتھ نے الہ آباد کا نام بدل کر "پریاگ راج” کرنے کا اعلان کیا تھا. یوگی آدتیہ ناتھ نے اس بارے میں معلومات دیتے ہوئے بتایا کہ اجلاس میں سنتوں اور دیگر معزز لوگوں نے الہ آباد کا نام پرياگ راج کئے جانے کی تجویز پیش کی تھی جسے حکومت کی جانب سے پہلے ہی پرياگراج میلہ اتھارٹی کا قیام کے وقت منظوری دی جا چکی ہے. ابھی پردیش کے گورنر نے بھی اس تجویز پر اپنی رضامندی دے دی ہے. انہوں نے مزید کہا کہ ہماری پوری کوشش ہو گی کہ جلد سے جلد ممکنہ طور پر الہ آباد کو پریاگ راج کردیا جائگا.