صنعاء : یمنی حکومت نے ہفتے کی شام بتایا ہے کہ حوثی ملیشیا نے ورلڈ فوڈ پروگرام سے وابستہ گندم کے جہاز کو الحدیدہ بندرگاہ پرگندم اتارنے سے روک دیا جس کے بعد گندم بردار بحری جہازکو وہاں سے دوسری بندرگاہوں کی طرف منتقل ہونا پڑا ہے۔یمنی حکومت کا کہنا ہے کہ حوثی ملیشیا کے انسانی امدادی کاموں میں رکاوٹیں ڈالنے اور بین الاقوامی تنظیموں کی طرف سے فراہم کی جانے والی امداد کو اپنے قبضے کی سازش کا واضح ثبوت ہے۔یمن کے وزیر اطلاعات معمر الاریانی نے اپنے ٹویٹر پیج پر ٹویٹس میں کہا ہے کہ ایرانی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا نے ورلڈ فوڈ پروگرام کے جہاز “گلوریس سی” سے گندم اتارنے سے روک دیا۔ اس پر بارہ ہزار پانچ سو ٹن گندم لادی گئی ہے۔ یہ گندم یمن میں جنگ زدہ عوام کے لیے عالمی ادارہ خوراک کی طرف سے بھیجی گئی ہے۔الاریانی نے مزید کہا کہ یہ کارروائی حوثی دہشت گرد ملیشیا کی غربت اور افلاس کی پالیسی کی تصدیق کرتی ہے۔اس سے انسانی المیہ اور اس کے زیر اقتدار علاقوں میں بسنے والے لاکھوں بے گھر لوگوں کے حالات زندگی سے لاتعلقی کا واضح ثبوت ہے۔الحدیدہ بندرگاہ پرگندم اتارنے کی۔


اپنی رائے یہاں لکھیں