ممبئی: مولانا آزاد اقلیتی مالیاتی کارپوریشن کے ذریعے ریاست میں اقلیتی طبقے کی خواتین بچٹ گروپوں کو کاروبار کے لئے 2لاکھ روپئے تک قرض دیا جائے گا۔ اس اسکیم کے تحت پہلے مرحلے میں 750بچت گروپوں کو قرض دیا جائے گا۔یہ اطلاع آج یہاں اقلیتی امور کے وزیر نواب ملک نے دی ہے۔

واضح ہو کہ اس اسکیم کے ذریعے اقلیتی طبقے کی خواتین میں کاروبار کے رجحان کو فروغ ملے گا اور انہیں خودروزگاری کے مواقع میسر آئیں گے۔ مسلم،عیسائی، بودھ، سکھ، جین، پارسی اور یہودی مذہب کی خواتین پر مشتمل بچٹ گٹ گروپس اس اسکیم سے فائدہ اٹھاسکیں گے۔ وومن اکنامک

ڈیولپمنٹ کارپوریشن( ایم اے وی آئی ایم) ، قومی شہری روزگار مہم اور مہاراشٹر دیہی روزگارمہم (امید مہم) کی مدد سے یہ اسکیم ریاست کے تمام اضلاع میں شروع کی جائے گی۔ اقلیتی خواتین کی وہ بچت گروپس جو اس سے قبل پہلے اور دوسرے مرحلے کی قرضوں کی ادائیگی کی ہے، وہ تیسرے مرحلے کے دو لاکھ روپئے کے قرض کے لیے اہل ہونگے۔ اس قرض میں کارپوریشن کا حصہ 1لاکھ 90ہزار ہوگا تو متعلقہ بچت گروپس کا حصہ 10ہزار ہوگا اور شرح سود7فیصد ہوگا۔وومن اکنامک ڈیولپمنٹ کارپوریشن سمیت دیگر اداروں کے ذریعے قائم کردہ وہ گروپس جن میں

اقلیتی طبقات کے خواتین کی اکثریت ہوگی، اس اسکیم سے فائدہ حاصل کرنے کے اہل ہونگے۔ خواتین بچٹ گروپس 70فیصد سے زائد ممبران کا تعلق اقلیتی طبقے سے ہونا ضروری ہے۔

نواب ملک نے بتایا کہ اس اسکیم کے بارے میں مزید معلومات مولانا آزاد اقلیتی مالیاتی کارپوریشن، وومن اکنامک ڈیولپمنٹ کارپوریشن(ایم اے وی آئی ایم) ، قومی شہری روزگار مہم، مہاراشٹر دیہی روزگار مہم کے دفاتر نیز ضلع وتعلقہ سطح کے دفاتر سے رابطہ قائم کیا جاسکتا ہے۔ اس اسکیم کے لیے مولانا آزاد

اقلیتی مالیاتی کارپوریشن کے ضلعی دفاتر میں موجود ہے۔ جبکہ کارپوریشن کی ویب سائٹ

https://mamfdc.maharashtra.gov.in

سے بھی مزیدمعلومات حاصل کی جاسکتی ہے۔ اس اسکیم کے تحت درخواست دینے کی آخری تاریخ 20جولائی2021ہے۔