کابل: افغانستان سے امریکی افواج کی واپسی کے درمیان پرتشدد جھڑپیں ہو رہی ہیں، وہیں اب طالبان متعدد صوبوں کے اضلاع پر قبضہ کرنے کے لئے منصوبہ بند انداز میں لڑ رہا ہے ۔ آخری 24 گھنٹوں 4 اور اضلاع پر اس کا کنٹرول ہو گیا ہے ۔ دہشت گردوں نے ہر جگہ بارودی سرنگیں بچھا دی ہیں ۔ بارودی سرنگ کے دھماکے میں 3 بچوں سمیت 11 افراد ہلاک ہوگئے۔ طالبانی دہشت گردوں نے نورستان میں ضلع دوآب پر قبضہ کرنے کے بعد منڈوال اور ایک اور ضلع پر بھی قبضہ کرلیا ہے۔

نورستان کی صوبائی کونسل کے ایک رکن نے تینوں اضلاع پر طالبان کے قبضے کی تصدیق کی۔ صوبہ جبول کا ضلع شنکی طالبان کے زیر قبضہ ہے۔ صوبہ بدگیس میں طالبان کی جانب سے بچھائی گئی بارودی سرنگ سے 11 افراد ہلاک ہوگئے۔ یہ تمام افراد سفر کر رہے تھے اور راستے میں سڑک پر بارودی سرنگ کے دھماکے میں ہلاک ہوگئے۔ ان میں تین بھی شامل ہیں ۔

افغانستان کے دارالحکومت کابل میں ، ایسے 27 مجرم پکڑے گئے ہیں ، جو تشدد کی آڑ میں ڈرگس اور اسلحہ اسمگل کررہے تھے۔ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی ایک رپورٹ کے مطابق ، طالبان اب امن مذاکرات میں شامل ہونے پر راضی نہیں ہیں۔ وہ القاعدہ سے قربت بنائے ہوئے ہے۔ انسانی حقوق کے کارکن امجد ایوب مرزا نے حکومت پاکستان سے مطالبہ کیا ہے کہ وہاں مقیم افغان شہریوں کو پاکستانی شہریت اور ووٹ کا حق دیا جائے۔