Waraqu E Taza Online
Nanded Urdu News Portal - ناندیڑ اردو نیوز پورٹل

افغانستان میں القاعدہ رہنما ایمن الظواہری کی موت: ذرائع

القاعدہ کے رہنما ایمن الظواہری کی موت کے حوالے سے خبریں کئی دن سے سوشل میڈیا پر گردش کر رہی تھیں اور اب متعدد پاکستانی اور افغان ذرائع نے عرب نیوز کو تصدیق کی ہے کہ وہ افغانستان میں قدرتی وجوہات کی بنا پر انتقال کر گئے ہیں۔69 سالہ الظواہری کو آخری بار رواں سال امریکہ پر ہونے والے نائن الیون حملوں کے سلسلے میں جاری کی جانے والی ویڈیو میں دیکھا گیا تھا۔

عرب نیوز نے کم از کم چار پاکستانی اور افغان سکیورٹی اہلکاروں سے الظواہری کی موت کی تصدیق کی ہے۔ نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر بات کرنے والے ان اہلکاروں میں سے دو نے مصر کے شہری اور القاعدہ کے رہنما الظواہری کی موت کی تصدیق کی جبکہ ان کے مطابق انہیں اس حوالے سے میڈیا سے بات کرنے کی اجازت نہیں ہے۔

ان کی ہلاکت کی تصدیق القاعدہ میں قیادت کے ایک خلا کو جنم دے سکتی ہے کیونکہ دو سینئیر کمانڈر جو ان کی جگہ لے سکتے تھے، انہیں حال ہی میں نشانہ بنایا جا چکا ہے۔ان میں سے ایک القاعدہ کے رہنما اسامہ بن لادن کے بیٹے حمزہ بن لادن تھے جنہیں یو ایس کاؤنٹر ٹیررازم آپریشن میں ہلاک کر دیا گیا تھا جبکہ دوسرے ابو محمد المصری تھے جنہیں القاعدہ قیادت میں دوسرے نمبر پر سمجھا جاتا تھا اور میڈیا رپورٹس کے مطابق انہیں رواں سال ایران میں ہلاک کیا جا چکا ہے۔

القاعدہ سے قریبی تعلق رکھنے والے ایک مترجم کے مطابق ‘الظواہری گذشتہ ہفتے افغان صوبے غزنی میں ہلاک ہوئے۔ وہ سانس کی بیماری کے باعث فوت ہوئے کیونکہ وہ اس کا کوئی باقاعدہ علاج نہیں کروا رہے تھے۔’قبائلی علاقوں میں موجود ایک پاکستانی سکیورٹی اہلکار نے بھی الظواہری کی موت کی تصدیق کی ہے۔اہلکار کے مطابق ‘ہمارا ماننا ہے کہ وہ اب زندہ نہیں ہیں اور ان کی موت قدرتی وجوہات کی بنیاد پر ہوئی ہے۔’ اہلکار نے اپنا نام ظاہر کرنے کی اجازت نہیں دی۔
افغانستان میں القاعدہ کے ایک قریبی ذرائع کے مطابق الظواہری رواں ماہ ہلاک ہو چکے ہیں اور ان کے جنازے میں ایک محدود تعداد میں ان کے ساتھیوں نے شرکت کی ہے۔