اسکولی بچوں کے نام پر دھوکہ دہی‘ ناندیڑ کے اسکولوں سے 26لاکھ روپے وصول

643

ناندیڑ:14ڈسمبر ( ورقِ تازہ نیوز) دھوکہ دے کر اسکول چلانے والے ضلع کے کئی اداروں کا کچھ سال قبل کرائے گئے آڈٹ میں پردہ فاش ہونے کے بعد محکمہ تعلیم نے اسکول نیوٹریشن (مڈ ڈے میل )کے نام پر ان اسکولوں کی طرف سے دی گئی رقم کی وصولی کے لیے کارروائی کی تھی۔

ریاست بھر میں پھیلے اس گھوٹالے میں ضلع کے 56 اسکول ملوث تھے۔ محکمہ تعلیم نے ان اسکولوں کو نیوٹریشن الاونس کی وصولی کے لیے پے منجمد کرنے کا نوٹس جاری کیا تھا۔ بازیابی کا یہ سلسلہ پچھلے کئی سالوں سے جاری تھا۔ لیکن، حال ہی میں، محکمہ تعلیم نے ان تمام اسکولوں سے تمام اسکولی غذائیت کی رقم اکٹھی کرکے سرکاری کھاتوں میں جمع کردی ہے۔

ان اسکولں میں ماڈرن اردو اسکول سے ایک لاکھ 37 ہزار، جیوندیپ ماڈل اسکول سے ایک لاکھ 53 ہزار، ناگریشور پرائمری اسکول سے ایک لاکھ 30 ہزار، اور کچھ اسکولوں سے ایک لاکھ سے زیادہ کی رقم وصول کی ہے۔جانچ پڑتال کے تجربے نے کئی اداروں کی بوگس انتظامیہ کو بے نقاب کردیا۔ اس انکشاف کے بعد کچھ بوگس اسکول بندبھی کئے گئے ۔بوگس کلاس دکھاکر ان اسکولوں نے لاکھوں روپے کادھوکہ حکومت کودیا ہے جس کاواضح انکشاف تفتیش میں ہوا ہے۔ان اسکولوں نے بوگس طلباءکی تعداد دکھاکر مڈڈے میل اسکیم کے تحت لاکھوں روپے اٹھاےے ہیں۔اس کے بعد انکشاف ہوا کہ ضلع کے 56 اسکولوں نے اسکولی غذائیت میں گھپلہ کیا ہے۔ ان سکولوں سے 26 لاکھ روپے کی وصولی کا عمل محکمہ پرائمری ایجوکیشن کے ایجوکیشن آفیسر نے شروع کیا۔

یہ رقم مکمل طور پر وصول کر لی گئی ہے۔ گووند راو? سیبل پرائمری اسکول، بیت موگرہ سے 1 لاکھ 3 ہزار 532 ہیں جبکہ گیان وکاس، سینٹ۔ دیگلورسے ایک لاکھ 5 ہزار 75 روپے ‘ نگریشور پرائمری اسکول مندر قندہار سے 1 لاکھ 30 ہزار 130 روپے، ماڈرن اردو پرائمری اسکول، ناندیڑسے 1 لاکھ 37 ہزار 506 روپے، مکند امبیڈکر پرائمری اسکول ناندیڑ 2 لاکھ 51 ہزار 899 روپے اور جیوندیپ ماڈل اسکول کالو تانڈا تعلقہ مکھیڑ سے ایک لاکھ 53 ہزار 885 روپے واپس کر دیے ہیں۔اس کے علاوہ دیگر سکولوںسے بھی رقم جمع کرنے کاسلسلہ جاری ہے۔