اسرائیل فلسطینی تنازعے پر ٹرمپ کے منصوبے کا سعودی خیرمقدم

دوبئی 29 جنوری [یو این آئی] اسرائیل فلسطینی تنازعے کے حل کی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے منصوبے کو فلسطینی قیادت جہاں مکمل طور پر رد کر چکی ہےوہیں سعودی عرب نے کہا ہے کہ وہ اس رخ پر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی کوششوں کی نہ صرف ’قدر‘ کرتا ہے بلکہ اسرائیل اور فلسطینیوں کے درمیان راست مذاکرات کا آغاز دیکھنا چاہتاہے۔

سعودی وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ امریکی صدر کے منصوبے سے اگر کہیں کوئی عدم اتفاق ہے تو اسے’’ امریکی سرپرستی میں‘‘ مذاکرات کے ذریعے حل کیا جائے اور امن کے رخ پرپیش قدمی کی جائے تا کہ ایک ایسا معاہدہ عمل میں آسکے جس میں فلسطینی عوام کو ان کے جائز حقوق مل سکیں۔ٹرمپ نے بھی اپنے منصوبے کو تاریخی قرار دیا تھا۔

سعودی وزارتی بیان کے مطابق ’’سعودی بادشاہت صدر ٹرمپ کی انتظامیہ کی طرف سے فلسطینیوں اور اسرائیل کے درمیان ایک جامع امن معاہدے کے لیے کوششوں کی قدر کرتی ہے‘‘۔

اگرچہ قبل ازیں فلسطینیوں نے مجوزہ امن معاہدے کے منصوبہ کو تاریخ کے کوڑے دان میں پھینکے جانے کے قابل گردانا تھا تاہم سعودی شاہ سلمان نے فلسطینی صدر محمود عباس کو ٹیلی فون پراس معاملے میں سعودی عرب کے دوٹوک موقف سے باخبر کر دیا ہے۔یہ اطلاع سعودی سرکاری نیوز ایجنسی ایس پی اے نے دی ہے۔

HAJJ ASIAN

WARAQU-E-TAZA ONLINE

I am Editor of Urdu Daily Waraqu-E-Taza Nanded Maharashtra Having Experience of more than 20 years in journalism and news reporting. You can contact me via e-mail waraquetazadaily@yahoo.co.in or use facebook button to follow me