واشنگٹن: تُرک ڈرامہ سیرئل ’ارطغرل غازی‘ مقبولیت کے نئے ریکارڈ قائم کر رہا ہے اور ہندوستان اور پاکستان میں اسے دیکھنے والوں کی تعداد بڑھتی جا رہی ہے۔ دریں اثنا، امریکہ سے اطلاع موصول ہوئی ہے کہ وہاں کی ایک خاتون اس سیرئل کے روحانی پیغامات سے متاثر ہو کر دائرہ اسلام میں داخل ہو گئیں۔

خبر رساں ایجنسی انادولو کی رپورٹ کے مطابق امریکا میں 60 سالہ خاتون نے ’ارطغرل غازی‘ سے متاثر ہو کر اسلام قبول کر لیا۔ اسلام قبول کرنے والی امریکی خاتون نے ترک ڈرامہ ’ارطغرل غازی‘ میں محی الدین ابن العربی کے پیغامات سن کر اسلام قبول کیا

امریکا کی ریاست وسکنسن سے تعلق رکھنے والی خاتون نے قبولِ اسلام کے بعد اپنا نام خدیجہ رکھا۔ اسلام قبول کرنے والی خاتون کو ترک ڈرامے میں ترگت اور سلجان خاتون کے کردار کافی پسند آئے۔ انہوں نے بتایا کہ ڈرامے میں محی الدین ابن العربی کے پیغامات سن کر وہ کافی متاثر ہوئیں اور ان کا زندگی کے بارے میں سوچ کا رخ تبدیل ہو گیا۔

نو مسلم خدیجہ کا کہنا ہے کہ انہیں تاریخ سے لگاؤ ہے جس کی وجہ سے ان کی توجہ اس ترک ڈرامے کی طرف گئی اور مجھے اسلام کے بارے میں جاننے اور اس کا مطالعہ کرنے کا موقع ملا، میں نے قرآن انگریزی میں کئی بار پڑھا اور اب میں پہلی فرصت میں ترکی جانا اور وہاں رہنا چاہتی ہوں۔ خاتون نے کہا کہ مجھے خوشی ہے کہ میں نے دینِ اسلام کو تسلیم کرتے ہوئے اللہ تعالیٰ کی وحدانیت پر ایمان لے آئی ہوں۔

نومسلم خاتون نے کہا کہ نیٹ فلیکس پر سرچ کے دوران انہوں نے ایک دن ’ارطغرل غازی‘ ڈرامہ سیریل دیکھنا شروع کیا تھا جسے وہ اب تک چار بار دیکھ چکی ہیں اور پانچویں بار دیکھ رہی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ وہ ڈرامہ دیکھنے کے بعد مقامی مسجد بھی گئیں جہاں مسلمان ان سے بہترین طریقے سے پیش آئے۔