اورنگ آباد:(ورق تازہ نیوز)مساجد میں لاﺅڈاسپیکر پر ہونے والی اذا ن کے متعلق سرکاری حکام و پولس سے کسی طرح کی کوئی غلط کتابت نہ کریں۔ واضح رہے کہ سوشل میڈیا پر فجر کی اذان لاوڈاسپیکر پردینے کے لئے پولس اسٹیشن سے اجازت طلب کرنے کے لئے درخواست کانمونہ سوشل میڈیا پر وائرل ہورہا ہے ۔اورتمام مساجد کے ذمہ داروں سے اپیل کی ہے کہ وہ دئےے گئے درخواست نمونے کومسجد کمیٹی کے لیٹر پیڈ پر لکھ کر اسے پولس اسٹیشن میں جمع کروائیں اور لاوڈاسپیکر پراذان دینے کی اجازت مانگیں ۔

تمام مسلمانوں سے اپیل کی جاتی ہےکہ سوشل میڈیا کے جھانسے میں نہ آئیں ۔ مسجد کمیٹیوں کے ذمہ داران او رریاست کے تمام مسلمانوں سے اپیل ہے کہ وہ اذان کے تعلق سے کسی بھی قسم کی کوئی خط و کتابت سرکاری حکام یا پولس اسٹیشن کے ذمہ داران سے نہ کریں۔واضح رہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے مطابق صوتی آلودگی میں اضافہ نہ ہو اس غرض سے رات دس بجے سے صبح چھ بجے تک لاوڈاسپیکر پرپابندی عائد ہے۔ درخواست دینے پرسرکاری حکام کے ذمہ داران یاپولس آفسر سپریم کورٹ کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اذان دینے کی اجازت نہیں دے گا۔اس لئے سوشل میڈیا پرجاری اس سازش کوناکام بنانے کےلئے مساجد کمیٹیوں کے ذمہ داران خاموشی اختیار کریں۔ اس طرح کی اپیل مسلم حلقوں کی جانب سے کی جارہی ہے۔