احمدآباد میں 172کوروناوائرس پازیٹو خواتین نے دیا بچوں کو جنم، 44 نومولود بچے بھی نکلے متاثر

15

newborn-weight-loss-gain-722x406احمدآباد: گجرات کے احمدآبا میں کوروناوائرس پازیٹو کے خوفناک معاملے سامنے آئے ہیں۔ بتایا جارہا ہے کہ احمدآباد میں الگ۔الگ اسپتالوں میں 172 کوروناوائرس پازیٹو (Corona positive) پائی گئیں۔ یہاں کے سول ہاسپیٹل، ایس وی پی، سولا سول، شاردابین اور ایل جی اسپتال میں کوروناوائرس سے متاثر خواتین نے جن بچوں کو جنم دیا ہے ان میں سے 44 نوزائیدہ بچے بھی کوروناوائرس پازیٹو پائے گئے ہیں۔

نو بھارت ٹائمس میں چھپی ایک خبر کے مطابق سول استال میں گائیناکولاجی اینڈ آبسٹیٹرکس ڈپارٹمینٹ کے ہیڈ ڈاکٹر امت مہتا نے بتایا کہ خواتین اس بات کو لیکر کافی فکرمند ہیں کہ ان کے بچے محفوظ رہ پائیں گے یا نہیں۔ اعدادوشمار کے مطابق گزشتہ دو ماہ میں 90 خواتین کی ڈلیوری کی گئی تھی۔ ان میں سے زیادہ تر کیس میں خواتین کوروناوائرس پازیٹو پائی گئیں۔ حالانکہ ان یں سے 30 سے بھی کم کیس میں بچے کوروناوائرس پازیٹو (Corona positive) نکلے۔

ایس وی پی اسپتال میں گزشتہ دو مہینوں میں 70 خواتین کو ڈلیوری کی جاچکی ہے۔ اس میں سے 15 بچے کوروناوائرس سے متاثر پائے گئے۔ ڈاکٹر پارول شاہ نے بتایا کہ سوائن فلو جیسی متاثرہ بیماریوں کے موازنے میں کورونا پازیٹو خواتین بہتر ترقی سے اس کا مقابلہ کررہی ہیں۔ کوروناوائرس پازیٹو خواتین میں سے صرف ایک خاتون کو سانس لینے میں دقت ہوئی جبکہ دیگر سبھی خواتین خود ہی ری کور ہوگئیں۔

ماہرین کے مطابق زیادہ تر خواتین کی عمریں 20 سے 30 سال کے درمیان ہیں۔ ان میں سے زیادہ تر خواتین میں کورونا کی کوئی علامت نہیں تھی۔ ڈاکٹر مہتا کے مطابق ماں سے بچے میں وائرل انفیکشن کے ٹرانسفر کی پہچان ورٹیکل ٹرانسمشن کت طور ر ہوئی۔ اس معاملے میں مزید معلومات جمع کرنے کی ضرورت ہے۔

ندوستان میں کورونا وائرس (Coronavirus) کے نئے مریضوں نے ایک بار پھر تمام ریکارڈ توڑ دیئے۔ وزارت صحت (Health Ministry) کے اعدادوشمار کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں میں کورونا کے 8380 نئے معاملے اور 193 مریضوں کی جان گئی۔ نئے معاملے سامنے آنے کے ساتھ ہی ملک میں کورونا سے متاثر مریضوں کی تعداد ایک لاکھ 82 ہزار 142 ہوگئی ہے۔ جمعہ کو کورونا کے 7,964 نئے معاملے ملے تھے جبکہ 265 مریضوں کی جان گئی تھی۔

وزارت صحت کے اعدادوشمار کے مطابق، ملک میں کورونا کے اب 89995 ایکٹیو کیس ہیں۔ کورونا وبا سے اب تک 5164 مریضوں کی موت ہوگئی ہے اور 86983 لوگ ٹھیک ہوچکے ہیں۔ ایک غیر ملکی اپنے وطن لوٹ چکا ہے۔ کورونا وائرس سے سب سے زیادہ مہاراشٹر متاثر نظر آرہا ہے۔ مہاراشٹر میں ایک دن میں 2,940 نئے معاملے سامنے آئے ہیں جبکہ 99 لوگوں کی موت ہوئی ہے۔ نئے مریض آنے کے بعد ریاست میں کورونا متاثرہ مریضوں کی تعداد 65,168 تک پہنچ گئی ہے۔

 

 

جرمنی، فرانس سے زیادہ میں ہندستان میں کورونا کے معاملات

نئی دہلی، 31مئی (یو این ائی) ملک میں کورونا وائرس (کووڈ۔19) کے انفیکشن کے معاملات جرمنی اور فرانس سے زیادہ ہوگئے ہیں اور اس وبا سے سب سے زیادہ متاثرہ ممالک کی فہرست میں ہندستان آج ساتویں مقام پر پہنچ گیا۔
’کووڈ19انڈیاڈاٹ اوآر جی‘ کے اعدادو شمار کے مطابق ملک میں کووڈ۔19کے ایک لاکھ 89ہزار سے زیادہ معاملات کی تصدیق ہوچکی ہے۔آج صبح یہ اعداد و شمار 1,82,143تھا۔ اب تک مجموعی طورپر 91,015مریض صحت یاب ہوئے ہیں جبکہ 5,390لوگوں کو بچایا نہیں جاسکا دیگر 93,349مریض ابھی زیرعلاج ہیں۔جان ہاپکنس یونیورسٹی کے مطابق جرمنی میں ایک لاکھ 83ہزار اور فرانس میں ایک لاکھ 88ہزار سے زیادہ مریضوں میں کورونا وائرس کے انفیکشن کی تصدیق ہوچکی ہے۔ تین دن پہلے ہی ہندستان ترکی کو پیچھے چھوڑ کر نویں نمبر پر پہنچا تھا۔ آج وہ اس معاملہ میں ساتویں مقام پر پہنچ گیا۔پوری دنیا میں کووڈ۔19کے اب تک 61لاکھ سے زیادہ معاملات سامنے آچکے ہیں۔ ان میں 17,73لاکھ معاملے صرف امریکہ سے ہیں۔ اس کے بعد بالترتیب برازیل (4.98لاکھ)، روس (4.05لاکھ)، برطانیہ (2.76لاکھ)، اسپین (2.39لاکھ) اور اٹلی (2.32) کا نمبر ہے۔

اٹھاولے نے فائرنگ کے ملزمین کو گرفتار کرنے کی ہدایت دی

نئی دہلی، 31مئی (یو این آئی) ری پبلکن پارٹی(آر پی آئی) کے قومی صدر اور سماجی انصاف اور امپاورمنٹ کے وزیرمملکت رام داس اٹھاولے نے دہلی کے نہال وہار علاقہ میں پارٹی کے اقلیتی محاذ کے قومی صدر شکیل سیفی کے فارم ہاوس پر ہوئی فائرنگ کے واقعہ کا انکشاف کرتے ہوئے دہلی پولیس کوملزمین کو گرفتار کو کرنے کی ہدیت دی ہے۔
مسٹر اٹھاولے نے اتوار کو نہال وہار جاکر جائے وقوع کے معائنہ کیا اور فارم ہاوس کے مالک مسٹر سیفی سے تفصیلی معلومات لی اور گولی لگنے سے زخمی گارڈ کی صحت کے بارے میں بھی معلوم کیا۔
انہوں نے دہلی پولیس کے اعلی حکام سے بات کرکے واقعہ کا جلد انکشاف کرکے ملزمین کی گرفتاری اور مستقبل میں اس طرح کا واقعہ پھر سے نہ ہواس کے لئے ضروری اقدامات کئے جانے کی ہدایت دی۔خیال رہے کہ آر پی آئی کے مسٹر سیفی کے نہال وہار علاقہ میں واقع فارم ہاوس پر صبح مسلح بدمعاش نے فائرنگ کی جس میں سیکورٹی گارڈ کے دونوں پیروں میں گولی لگی ہے۔

نہال وہا ر میں آر پی آئی کے لیڈرپر فائرنگ

نئی دہلی، 31مئی (یو این آئی) مرکز کی قومی جمہوری اتحاد (این ڈی اے) حکومت میں اتحادی رام داس اٹھاولے کی ری پبلکن پارٹی آف انڈیا (آ ر پی آئی) کے لیڈر محمد شکیل سیفی کی نہال وہار علاقہ میں واقع فارم ہاوس پر مسلح بدمعاشوں نے فائرنگ کی جس میں گارڈ کے دونوں پیروں میں گولی لگی ہے۔باہری دہلی ضلع کے ایک پولیس افسر نے اتوار کو بتایا کہ صبح تقریباًً نو بجکر پندرہ منٹ ہوئے فائرنگ کے اس واقعہ میں مسٹر سیفی کے گھر پر تعینات سیکورٹی گارڈ ہری ناتھ (50) زخمی ہوگیا۔ اس کے دونوں پیروں میں ایک ایک گولی لگی ہے۔ اطلاع ملنے پر موقع پر پہنچی پولیس نے زخمی گارڈ کو علاج کے لئے بالاجی ایکشن اسپتال میں داخل کرایا جہاں اس کا علاج چل رہا ہے۔پولیس کے مطابق مسٹر ہری ناتھ نے کہاکہ فارم ہاوس کے گیٹ پر ایک شخص نے دروازہ کھٹکھٹا یا اور فائرنگ شروع کردی۔پولیس نے نہال وہار تھانہ میں معاملہ درج کرکے تفتیش شروع کردی ہے۔

حکومت گھریلو صنعت کے کاروبار کو سہولیات فراہم کرے:مایاوتی

نئی دہلی،31مئی(یو این آئی)بہوجن سماج پارٹی(بی ایس پی)کی صدر مایاوتی نے اتوار کو کہا کہ حکومت کوغیر ملکی کمپنیوں کو لبھانے کے بجائے گھریلو صنعتوں کو سہولت دینی چاہیے جس سے ملک خود کفالت کی جانب بڑھے گا۔
محترمہ مایاوتی نے ٹویٹ سیریز میں کہا کہ چین چھوڑ کر ہندوستان آنے والی کمپنیوں کے انتظار کے بجائے مرکزاور اترپردیش حکومت کو اپنے دم پر خودکفیل بننے کی کوشش شروع کرنی چاہئےکیونکہ’اسپیشل اکنامک زون‘جیسی سڑک،پانی،بجلی وغیرہ کی مفت بنیادی سہولت اور کارکنوں کے کام کے مقام کے قریب رہنے کا انتظام یہاں نہیں ہے۔
انہوں نے کہا ، ” اسپیشل اکنامک زون جیسی سہولیات ہندوستانی تاجروں کو دے کر ان کا اچھا استعمال معیاری اشیاء کی تیاری کویقینی بنایا جائے تو ویران چھوٹے اور درمیانہ درجے کی صنعتوں،متاثرہ مزدورطبقے کا مفاد وفلاح اور ہندوستان کو صحیح معنی میں خود کفیل بنانا تھوڑا ضرور آسان ہوجائے۔
محترمہ مایاوتی نے الزام عائد کیا کہ لاک ڈاؤن کے سبب بیروزگاری اور بدحالی میں گھر لوٹے لاکھوں مزدوروں کو فوری موثرمدد فراہم کرنے کے بجائے اتر پردیش میں مفاہمت ناموں پر دستخط اور اعلانات وغیرہ دھوکہ دہی مہم ایک مرتبہ پھر شروع ہوگئی ہے۔انہوں نے کہاِ کہ یہ انتہائی افسوسناک ہے۔عوامی مفادات کے ٹھوس اقدامات کے بغیر یہ مسئلہ اور بھی بڑا ہوجائے گا۔

ممبئی میں کورونا سے 38,442متاثر، 1227کی موت

ممبئی، 31مئی (یو این آئی) ملک کی اقتصادی راجدھانی کہی جانے والی ممبئی میں کورونا وائرس کی صورتحال سنگین ہوتی جارہی ہے اور یہاں اب تک 38,442لوگ اس سے متاثر ہوچکے ہیں جبکہ 1227لوگوں کی اس وبا سے موت ہوچکی ہے۔
سرکاری ذرائع کے مطابق اب تک 16,364لوگوں کو مکمل طورپر صحت یاب ہونے کے بعد اسپتال سے چھٹی دے دی گئی ہے۔ راحت کی بات یہ ہے کہ لوگو ں کے صحت مند ہونے کی شرح 42.56فیصد ہے۔شہر میں فی الحال 20,851فعال معاملات ہیں جن کا مختلف اسپتالوں میں علاج کیا جارہا ہے۔

کورونا کا بحران ٹلا نہیں، تمام الرٹ رہیں: شیوراج

بھوپال، 31مئی (یو این آئی) مدھیہ پردیش کے وزیراعلی شیوراج سنگھ چوہان نے آج لاک ڈاون چار کی مدت ختم ہونے پر ریاست کے کورونا متاثرہ کنٹینمنٹ علاقہ میں جہاں لاک ڈاون میں 30جون تک توسیع کا اعلان کیا تو باقی علاقوں میں معمول کے حالات بحال کرنے کی بات کہی۔مسٹر چوہان نے رات میں ریاست کے عوام سے خطاب کرتے ہوئے کئی رعایتوں کا بھی اعلان کیا۔ انہوں نے ساتھ ہی لوگوں کو ہوشیار کیا کہ کورونا کا بحران ابھی ٹلا نہیں ہے۔ اگر وزیراعظم نریندر مودی کے کورونا سے نپٹنے کے لئے بتائے گئے اقدامات پر سختی سے عمل نہیں کیا گیا تو کورونا لوگوں کو فوراً اپنی زد میں لے لے گا۔ انہوں نے ریاست کے عوام سے کورونا کو شکست دینے کی اپیل کرتے ہوئے کہاکہ اس کے لئے دو گز کی دوری، منہ پر ماسک پہننے اور دیگر اقدامات پر عمل کرنا ضروری ہے۔ مسٹر چوہان نے کہاکہ وزیراعظم مودی نے کورونا سے لڑائی میں نئی راہ دکھائی، ملک کی بہتر طریقہ سے قیادت کی، جس سے ہم نے کورونا پر کافی حد تک جیت حاصل کرلی ہے۔ ہمارے کورونا مجاہدین کی مسلسل محنت اور عوام کے تعاون سے آج ہم ریاست میں کورونا کو ٹھیک طریقہ سے کنٹرول کرسکے ہیں لیکن ابھی مسلسل ہوشیار رہنے اور محتاط رہنے کی ضرورت ہے۔ ہمیں کورونا سے بچاوکے لئے وزیراعظم مودی کے بتائے گئے دو گز کی دوری (فزیکل ڈسٹینسنگ)، فیس کور (ماسک لگانا)، بار بار ہاتھ دھونا، عوامی مقامات پر نہیں تھوکنے پر سختی سے عمل کرنا ہوگا۔ تبھی ریاست سے کورونا کو مکمل طورپر بھگا سکیں گے۔انہوں نے کہاکہ لاک ڈاون کے چوتھے مرحلہ کے ختم ہونے کے بعد اب پانچواں مرحلہ ’ان لاک 1.0‘ مرحلہ ہوگا۔ ہم اس میں حکومت ہند کی گائڈ لائنس پر مکمل عمل کریں گے۔ ساتھ ہی ریاست میں مرحلہ وار طریقہ سے اقتصادی سرگرمیوں کو چلائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اضلاع میں زیادہ متاثرہ محلہ، کالونی وغیرہ علاقہ کنٹینمنٹ ایریا ہوں گے۔ ان میں 30جون تک لاک ڈاون اسی طرح نافذ رہے گا۔ کنٹینمنٹ علاقوں میں صرف ضروری سرگرمیوں کی اجازت دی جائے گی۔ اس کے علاوہ ریاست کا باقی علاقہ معمول کے مطابق ہوگا۔

متنازعہ حقائق کی سماعت آرٹیکل 226کے تحت نہیں: دہلی ہائی کورٹ

نئی دہلی، 31مئی (یو این آئی) دہلی ہائی کورٹ نے لاک ڈاون کی مدت کی تنخواہ دینے سے متعلق سے سرکاری نوٹفکیشن پر عمل سے متعلق ایک عرضی کو حقائق کے متنازعہ سوالات کا حوالہ دیتے ہوئے نپٹارہ کردیا ہے۔
جج نوین چاولہ نے عرضی گزار نرمل بھگت اور دیگر کی طرف سے پیش وکیل ستیم سنگھ راجپوت اور امت کمار شرما کے دلائل سننے کے بعد یہ کہتے ہوئے عرضی کا نپٹارہ کردیا کہ اس عرضی میں کچھ متنازعہ حقائق ہیں جن پر آئین کے آرٹیکل 226کے تحت سماعت نہیں کی جاسکتی۔عدالت نے حالانکہ عرضی گزاروں کو یہ چھوٹ ضرور دی کہ وہ ہلی شاپ اور اسٹیبلشمنٹ ایکٹ، 1954کے تحت متعلقہ عدالت یا دیگر اتھارٹی کے سامنے اپنی فریاد لیکر جائیں۔
دہلی حکومت کے وکیل سنجے گھوش نے عدالت کو یقین دلایا کہ عرضی گزاروں کی طرف سے جب کبھی اس معاملے میں عرضی داخل کی جائے گی تب یہ کوشش رہے گی کہ اسے تین مہینہ میں نپٹایا جائے۔ عدالت کے سامنے یہ بھی واضح کیا گیا کہ دونوں فریقین تمام متعلقہ عدالت یا اتھارٹی کو مکمل تعاون کریں گے اور ملتوی کئے جانے کی مانگ نہیں کریں گے۔عرضی گزاروں کا دعوی تھا کہ وہ گزشتہ کئی برس سے متعلقہ کمپنیوں کے ملازم رہے ہیں او ر عدالت وزارت داخلہ کے سرکلر کے مطابق لاک ڈاون کی مدت کی بھی تنخؤاہ دینے کا آجر کو حکم دے جبکہ کمپنیوں کا دعوی ہے کہ عرضی گزار مستقل ملازم نہیں تھے بلکہ ان سے ضرورت کے مطابق کام کرالیا جاتا تھا۔

 

مہاراشٹر، گجرات میں تین جون تک سمندری طوفان دستک دے سکتا ہے

نئی دہلی، 31مئی (یو این آئی) بحیرہ عرب اور لکشدیپ کے اوپر کم دباو کا علاقہ بننے کی وجہ سے سمندری طوفان کے اٹھنے اور اس کے تین جون تک مہاراشٹر اور گجرات کے ساحلی علاقوں میں دستک دینے کا اندیشہ ہے۔
ہندستانی محکمہ موسمیات محکمہ (آئی ایم ڈی) نے کہا کہ صبح جنوب۔ مشرق او ر مشرق۔ وسطی بحیر سمندر او رلکشدیپ کے اوپر کم دباو کا علاقہ بن گیا ہے اور اس کی وجہ سے سمندری طوفان کے اٹھنے کا اندیشہ ہے۔ بحیر ہ عرب اور لکشدیپ کے اوپر کم دباو کا علاقہ بننے کی وجہ سے اتوار کو کونکن اور گوا میں درمیانہ سے لیکر تیز بارش ہوئی۔محکمہ موسمیات نے 31مئی اور یکم جون کو لکشدیپ، کیرالہ او ر ساحلی کرناٹک کے بیشتر مقامات پر درمیانی سطح سے لیکر تیز بارش ہونے کی پیشن گوئی کی ہے۔محکمہ موسمیات کے مطابق 31مئی کو جنوبی کونکن اور گوا میں کچھ مقامات پر ہلکی اور کچھ مقامات پر تیز بارش ہوسکتی ہے۔ دو اور تین جون کو بھی کونکن اور گوا کے کچھ مقامات پر ہلکی اور کچھ مقامات پر تیز بارش ہونے کا اندیشہ ہے۔