زرعی اصلاحات ضروری ،حکومت غریبوں کیلئے وقف ۔سکھوں کو نشانہ مت بنائیں۔ پارلیمنٹ میں خطاب

نئی دہلی : وزیراعظم نریندر مودی نے آج اُن عناصر کو تنقید کا نشانہ بنایا جو احتجاجی سکھ کسانوں کے خلاف بول رہے ہیں ۔ اُنھوں نے کہاکہ اس سے ملک کا کچھ بھلا نہیں ہوگا ۔ وزیراعظم نے احتجاجی کسانوں سے اپیل کی کہ وہ اپنی زائد از دو ماہ طویل ہڑتال ختم کردیں اور اُنھیں یقین دلایا کہ انتظامیہ کی طئے کردہ قیمت یا ایم ایس پی پر فصلوں کی خریداری جاری رہے گی ۔ وزیراعظم مودی نے پیر کو اس بات کا اعادہ کیا کہ ان کی حکومت غریبوں کیلئے وقف ہے اور غربت کے خاتمے کے لئے زرعی اصلاحات ضروری ہیں۔ صدرجمہوریہ کے پارلیمنٹ سے مشترکہ خطاب پر تحریک تشکر کا جواب دیتے ہوئے مودی نے راجیہ سبھا میں کہا کہ ملک میں 12 کروڑ کسانوں کے پاس دو ایکڑ سے بھی کم اراضی ہے اور انہیں حکومت کی جانب سے دی جارہی امداد کا کوئی فائدہ نہیں مل پاتا ، سرکار کا ارادہ اس امداد کو ان کسانوں تک پہنچانا ہے ۔انہوں نے کہا کہ زرعی اصلاحات گزشتہ حکومتوں کی بھی ہمیشہ سے ترجیحات میں شامل رہی ہیں۔ انہوں نے اس کے لئے سابق وزرائے اعظم لال بہادر شاستری اور چودھری چرن سنگھ کا بھی ذکر کیا۔ انہوں نے کہا کہ کاشتکار اپنا احتجاج واپس لے لینا چاہئے ۔ کوئی قانون حتمی نہیں ہے ۔ ان میں بہتری کی وسیع گنجائش ہے اور بعد میں بھی بہتری لائی جائے گی۔انہوں نے یقین دہانی کرائی کہ ایک بار جب قانون نافذ ہوجائے تو ان میں جو بھی کمی ہے اسے دور کردیا جائے گا۔انھوں نے یقین دلایا کہ منڈیوں کو جدید طرز پر فروغ دیا جائے گا جس سے نہ صرف کسانوں بلکہ تمام متعلقین کو فائدہ ہوگا ۔ مودی نے حکومت کی کامیابیوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ سرکاری اسکیمیں معاشرے کے آخری فرد کے لئے تک ہیں۔ انہوں نے جن دھن اکاؤنٹس ، ڈجیٹل ٹرانزیکشنز ، اُجولا ، پردھان منتری آواس یوجنا اور بیت الخلا کی تعمیر جیسے بڑے پروگراموں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ حکومت دور دراز کے علاقوں میں بھی لوگوں کو فائدہ پہنچا ر ہی ہے ۔ انہوں نے مختلف اعداد و شمار کے حوالے سے بتایا کہ ملک مختلف شعبوں میں ترقی کر رہا ہے ۔ وزیر اعظم نے کہا کہ ملک اقتصادی محاذ پر مضبوطی سے آگے بڑھ رہا ہے ۔ کورونا دور میں جہاں پوری دنیا میں معاشی سرگرمیاں تھم گئی ہیں ، ہندوستان کو براہ راست سب سے زیادہ غیر ملکی سرمایہ ملا ہے ۔ دنیا کی نگاہیں ہندوستان پرٹکی ہوئی ہیں اور ملک پر دنیا کا اعتماد بڑھتا جارہا ہے ۔ زرمبادلہ کے ذخائر ریکارڈ سطح پر ہیں۔ خوراک کی پیداوار ملک میں اعلی سطح پر ہے ۔انہوں نے کہا کہ چھوٹے کاشتکاروں کو بھی فصل انشورنس اسکیم میں شامل کیا گیا ہے اور گذشتہ سال اس اسکیم کے تحت 95000 کروڑ روپئے دیئے گئے ہیں۔ کسان سمان ندھی کے تحت 10 کروڑ کسانوں نے فائدہ اٹھایا ہے۔ مودی نے نوجوانوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان مواقع کی سرزمین ہے ۔ آزادی کے 75 سال کو محرک سال سمجھا جانا چاہئے ۔


اپنی رائے یہاں لکھیں