اجمل قصاب ہندوستانی شہری تھا؟

0 25

لکھنو:اترپردیش کے اوریا ضلع سے ممبئی حملے کے دہشت گرد اجمل قصاب کا مبینہ طورپر رہائشی اورذات سرٹیفکیٹ جاری ہوگیا۔ اس فرضی واڑے نے افسران کے ہوش اڑا دیئے ہیں۔ معاملہ سامنے آنے کے بعد متعلقہ لیکھ پال کو معطل کردیا گیا ہے۔ وہیں دہشت گرد اجمل قصاب کے ذات اوررہائشی سرٹیفکیٹ کو منسوخ کردیا گیا ہے۔ آن لائن درخواست دہندہ کے خلاف جانچ کے احکامات دیئے گئے ہیں۔انگریزی اخبار’انڈین ایکسپریس’ کے مطابق یہ معاملہ اوریا ضلع کے بدھونا تحصیل کا ہے۔ قصاب کے ذات اوررہائشی سرٹیفکیٹ 21پر اکتوبر 2018 کی تاریخ لکھی ہے جبکہ اس کی جائے پیدائش امبیڈکرنگرگاوں دکھایا گیا ہے۔اس حادثہ سے یوپی حکومت کی سرگرمی پرسوالیہ نشان لگ رہے ہیں۔ معاملے کے بعد اس بات کا انکشاف ہوگیا کہ یوپی کے سرکاری دفاترمیں چند روپئے دے کرکوئی بھی کسی کا فرضی سرٹیفکیٹ بنوا سکتا ہے۔ واضح رہے کہ دہشت گرد اجمل قصاب کو 26/11 دہشت گردانہ حملے میں زندہ پکڑا گیا تھا۔ممبئی حملے کے دوران 2008 میں اجمل عامرقصاب کو اسسٹنٹ سب انسپکٹرتکارام نے زندہ پکڑلیا تھا۔ قصاب نے اپنے آپ کو چھڑانے کے لئے انسپکٹرتکارام کو گولی بھی ماردی تھی۔ خوان سے لتھ پتھ تکارام نے قصاب کونہیں چھوڑا تھا۔ بعد میں وہ قصاب کی ماری گئی گولی سے شہید ہوگئے تھے۔ جس مقام پرقصاب پکڑا گیا تھا، وہاں اب ان کی مورتی لگائی گئی ہے۔