اتراکھنڈ الیکشن کے لیے آن لائن ووٹنگ پر غور، عدالت نے حکومت اور انتخابی کمیشن سے مانگا جواب

0 2

نینی تال: 6جنوری:(ایجنسیز)اتراکھنڈ ہائی کورٹ نے ریاست میں کورونا وائرس کے معاملے بڑھنے کے ساتھ ہی اومیکرون کے کیسز ملنے پر اسمبلی انتخاب اور ریلیوں کو ملتوی کرنے کا مطالبہ کرنے والی مفاد عامہ عرضی پر سماعت کے بعد حکومت ہند اور انتخابی کمیشن سے پوچھا ہے کہ کیا انتخابی ریلیاں ورچوئلی اور ووٹنگ آن لائن ہو سکتی ہیں؟ نینی تال ہائی کورٹ نے 12 جنوری تک اس معاملے میں حکومت سے جواب دینے کو کہا ہے۔دراصل اتراکھنڈ میں بھی کورونا کا قہر بڑھتا جا رہا ہے۔

اتراکھنڈ میں ایک دن میں 500 سے زائد نئے کورونا مریض ملے ہیں۔ انفیکشن کی رفتار تیزی سے بڑھنے کے سبب سرگرم مریضوں کی تعداد ایک ہزار کے پار ہو گئی ہے جب کہ 24 گھنٹے میں 119 متاثرہ مریض ٹھیک ہوئے ہیں۔ ریاست میں اب تک 3 لاکھ 46 ہزار 468 لوگ کورونا کے شکار ہو چکے ہیں۔پہاڑی ریاست اتراکھنڈ میں بھی کورونا کا گراف تیزی کے ساتھ بڑھ رہا ہے، گزشتہ 24 گھنٹے میں ریاست کے سبھی 13 اضلاع میں 505 لوگ پازیٹو پائے گئے ہیں جس میں دہرادون میں 253 مریض ملے ہیں۔

ہریدوار میں 64، نینی تال میں 55، پوڑی میں 60، اودھم سنگھ نگر میں 37، باگیشور میں 9، الموڑا، چمولی و ٹیہری میں 5-5، چمپاوت میں 3، پتھورا گڑھ میں 6، اترکاشی میں 2، رودرپریاگ ضلع میں ایک کے متاثر ہونے کی خبر ملی ہے۔حالانکہ راحت کی بات یہ ہے کہ ریاست میں کسی بھی کورونا مریض کی موت نہیں ہوئی ہے۔ 119 متاثرین نے گزشتہ چوبیس گھنٹوں میں کورونا کو شکست بھی دے دی ہے۔ انھیں ملا کر اب تک 3 لاکھ 31 ہزار 628 لوگ صحت یاب ہو چکے ہیں۔ متاثرین کے مقابلے میں ٹھیک ہونے والوں کی تعداد کم ہے، جس سے ریاست میں سرگرم مریضوں کی تعداد ایک ہزار پہنچ گئی ہے۔