اب ٹرین کے کھانے کے مینو میں تبدیلی،کل سے یہ کھانے بھی ملیں گے

1,318

نئی دہلی: ہندوستانی ریلوے کی طرف سے مسافروں کے لیے ہر بار نئی سہولیات متعارف کرائی جاتی ہیں۔ ریلوے کی جانب سے متعارف کرائی گئی ان سہولیات کو سن کر آپ بھی خوش ہوں گے۔ دریں اثنا، ریلوے بورڈ نے ٹرینوں میں دستیاب کھانے کے مینو میں تبدیلی کی ہے۔ ریلوے مسافروں کو اب سفر میں علاقائی کھانا پیش کیا جائے گا۔

لٹی چوکھیا سے لے کر اڈلی سانبر تک، یہ پکوان پیش کیے جائیں گے۔ اس کے علاوہ ٹرین میں سفر کرنے والے جین برادری کے لوگوں کے لیے خالص سبزی خور کھانا فراہم کیا جائے گا۔

اس کے ساتھ اب ذیابیطس کے شکار مسافروں کو ٹرین میں ابلی ہوئی سبزیاں اور جئی بھی پیش کی جائیں گی۔ ہول اناج کے بین الاقوامی سال -2023 کے پیش نظر، ریلوے بورڈ نے ٹرینوں میں دستیاب کھانے کے مینو میں پورے اناج کے آٹھ پکوان شامل کیے ہیں۔ نئی تبدیلی کے بعد ٹرین میں بچوں کے کھانے کا بھی انتظام کیا جائے گا۔

ریلوے بورڈ کے جاری کردہ حکم کے مطابق، یہ تبدیلی کل یعنی 26 جنوری سے تمام پریمیم ٹرینوں یعنی راجدھانی، شتابدی، دورنتو اور وندے بھارت میں لاگو ہو جائے گی۔

ریلوے بورڈ نے تین سال سے زائد عرصے کے بعد ٹرینوں میں دستیاب کھانے کے مینو میں تبدیلی کی ہے۔ اس سے قبل 2019 میں، ریلوے نے ٹرینوں کے کیٹرنگ مینو میں تبدیلی کی تھی۔ ریلوے بورڈ حکام کا کہنا ہے کہ کل سے ریلوے مسافر ٹرینوں میں سفر کے دوران مشہور علاقائی پکوان چکھ سکیں گے۔ علاقائی پکوان جیسے لٹی چوکھا، اڈلی سنبھر، ڈوسا، بڑا پاو، پاوبھاجی، بھیل پوری، کھچڑی، زلمودی، ویج نان ویج موموس، اسپرنگ رول وغیرہ ٹرین میں دستیاب ہوں گے۔

جین برادری سے تعلق رکھنے والے مسافروں کو پیاز اور لہسن کے بغیر کھانا دیا جائے گا۔ اگر کوئی ذیابیطس کا شکار ہے تو وہ ابلی ہوئی سبزیاں، دودھ جئی، دودھ کارن فلیکس، انڈے کی سفید آملیٹ وغیرہ کھا سکتا ہے۔ ٹرین میں شوگر فری چائے اور کافی بھی ملے گی۔ جنوبی ہندوستانی کھانوں کے شوقین مسافروں کو ناچانی لاڈو، ناچانی کچوری، ناچانی اڈلی، ناچانی ڈوسا، ناچانی پراٹھا، ناچانی اپما ملیں گے۔