اب طلباءکو ہوم ورک نہیں دیاجائے گا :ریاستی وزیرتعلیم کیسرکر

1,190

ممبئی: 16ستمبر۔ (ورق تازہ نیوز)ریاست کے تعلیمی شعبے سے ایک بڑی خبر سامنے آرہی ہے۔ پہلی سے چہارم جماعت کے طلباءکو ہوم ورک سے دور رکھنے کا فیصلہ ریاستی حکومت کے زیر غور ہے۔ وزیر تعلیم دیپک کیسرکر نے بتایا کہ جلد ہی ماہرین سے بات چیت کے بعد کوئی فیصلہ لیا جائے گا۔

ریاست میں شندے حکومت کے اقتدار میں آنے کے بعد کئی فیصلے لیے گئے۔ اگر اس پر مہر لگ جاتی ہے تو یہ فیصلہ تاریخی ہو سکتا ہے۔ کیسرکرنے کہاکہ”میرا ماننا ہے کہ بچوں پر زیادہ بوجھ نہیں ہونا چاہیے، ان کے دماغوں کو نشوونما پانے کی اجازت ہونی چاہیے۔میں اساتذہ کا احترام کرتا ہوں۔ آدھے گھنٹے کے لیے ہم جو بھی پڑھائیں اسے احتیاط سے پڑھائیں تاکہ طلبہ کو ہوم ورک کرنے کی ضرورت نہ پڑے۔ یہ میری ذاتی رائے ہے،“میں ٹیچرز ایسوسی ایشن، انسٹی ٹیوٹ کی انتظامیہ سے بات کروں گا اور پھر کوئی فیصلہ کروں گا۔ اتنا بڑا فیصلہ آسانی سے نہیں لیا جا سکتا،“۔

ایک اور بات یہ ہے کہ جو کتابیں ہم تعلیمی نظام کو دے رہے ہیں اب ہم مکمل طور پر بدل رہے ہیں۔ ایک سبق کے بعد اس کے ساتھ دو پرچے منسلک ہوں گے۔ لہذا سبق ختم ہونے کے بعد بچے اس میں رجسٹر ہو سکتے ہیں۔ کتابیں تین حصوں میں ہوں گی۔ جب بچہ اگلے سال اسکول جائے گا تو وہ صرف ایک کتاب لے کر جائے گا۔ انہوں نے اس یقین کا بھی اظہار کیا کہ یہ تجربہ سو فیصد کامیاب ہوگا۔