اب ایم آئی ایم لیڈر کے خلاف بلڈوزر کاررواوئی، دو منزلہ ہوٹل زمین بوس

992

بریلی: اتر پردیش کی یوگی حکومت ایک بار پھر بلڈوزر کارروائی کے حوالہ سے سرخیوں میں ہے۔ اس بار بریلی میں اے آئی ایم آئی ایم (آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین) لیڈر کے ہوٹل پر کارروائی کی گئی ہے۔ اے آئی ایم آئی ایم لیڈر توفیق پردھان کے ہوٹل کو ڈیولپمنٹ اتھارٹی نے بلڈوز کر دیا۔

بتایا جا رہا ہے کہ ہوٹل کو کئی گھنٹوں کی کارروائی کے بعد منہدم کیا گیا۔ہوٹل پر بلڈوزر کے ذریعے کی گئی کارروائی کو جمعرات کی شام تک انجام دیا گیا۔ ہوٹل کی دوسری منزل پر ایک بہت بڑا باز بنایا گیا تھا۔ کہا جاتا ہے کہ اس سے لوگ متوجہ ہوتے تھے۔ کارروائی کے دوران اس باز کو بھی مکمل طور پر تباہ کر دیا گیا۔

الزام ہے کہ اے آئی ایم آئی اے رہنما توفیق نے بائی پاس پر واقع 700 مربع میٹر اراضی پر دو منزلہ ہوٹل تعمیر کرایا تھا اور اس تعمیر کے لیے ڈویلپمنٹ اتھارٹی سے اجازت نہیں لی تھی۔ اتھارٹی حکام کے مطابق ہوٹل گرین بیلٹ کو ختم کرنے کے بعد غیر قانونی طور پر تعمیر کیا گیا تھا، یہی وجہ ہے کہ ہوٹل پر کارروائی کی گئی۔

ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے مطابق ہوٹل کے مالک اور اے آئی ایم آئی ایم لیڈر توفیق کو کئی قانونی نوٹس بھیجے گئے تھے، جس میں ان سے کہا گیا تھا کہ وہ اپنی غیر قانونی تعمیر کو خود ہی گرا دیں لیکن انہوں نے ایسا نہیں کیا۔ لہذاس کارروائی کو انجام دیا گیا۔ بلڈوزر کی کارروائی پر ایم آئی ایم لیڈر توفیق کا ردعمل سامنے آیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے مسلمان ہونے کی سزا ملی ہے۔ اس سے پہلے سماج وادی پارٹی کے لیڈر اور سابق ایم ایل اے شاہزل اسلام کے پٹرول پمپ پر بھی ایسی ہی کارروائی کی گئی تھی۔