3,222 کروڑ روپئے مالیتی پراجیکٹس کا افتتاح ۔شمال مشرق کو ملک کی ترقی کا اِنجن بنانا میرا مقصد :وزیراعظم مودی

دھیماجی (آسام) : اسمبلی الیکشن کا سامنا کرنے والی ریاست آسام کیلئے اپنی حکومت کے خزانہ کھولتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی نے آج متواتر کانگریس حکومتوں کو تنقید کا نشانہ بنایا جنہوں نے ملک پر آزادی کے بعد سے حکمرانی کی لیکن اس ریاست اور شمال مشرق کو کئی دہوں تک نظرانداز کئے رکھا۔ ایک ماہ میں آسام کو اپنے تیسرے دورہ پر وزیراعظم نے 3,222 کروڑ روپئے سے زیادہ مالیت کے مختلف پراجیکٹس کو قوم کے نام معنون کرتے ہوئے ان اقدامات کی تفصیل بتائی جو سرب نند سونوال زیرقیادت ریاستی حکومت اور مرکز نے گزشتہ چند سال میں ریاست کی متوازن ترقی کیلئے کئے ہیں۔ وزیر اعظم مودی نے پیر کو کہا کہ ان کی توجہ شمال مشرق کو ہندوستان کی ترقی کا انجن بنانے اور اس مقصد کے پیش نظر مرکزی اور ریاستی حکومتیں مشترکہ طور پر خطے میں بنیادی ڈھانچے کی ترقی پرکام کررہی ہیں ۔ مودی نے آسام کے دھیماجی کے شیلا پتھر میں تیل اور گیاس منصوبے کو قوم کے لئے وقف کرنے کے بعد کہا کہ شمال مشرق کو ہندوستان کی ترقی کا نیا انجن بنایا جائے گا۔ آج ہم دیکھ رہے ہیں کہ اس بات کو محسوس کیا جا رہا ہے ۔ انہوں نے خصوصی طور سے سابقہ حکومتوں پر الزام عائد کیا کہ آسام میں برہم پتر کے شمالی علاقے کے ساتھ سوتیلا رویہ اختیار کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ چائے کے باغات کا آسام کی معیشت میں بڑا کردار ہے ۔ ان چائے کے باغات میں کام کرنے والے لوگوں کی زندگی کو آسان بنایا جانا چاہئے ۔ یہ ہماری حکومت کی ایک بڑی ترجیحات میں سے ایک ہے ۔ مودی نے کہا کہ ریاستی حکومت اور مرکزی حکومت کسانوں کو جدید زرعی ٹیکنالوجی مہیا کرواکر ان کی آمدنی بڑھانے کے لئے کوشاں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آسام کی چائے ، سیاحت ، ہینڈلوم اور دستکاری سے ریاست کی خود کفالت کو تقویت ملے گی۔شمال مشرق کے لئے اعلان کردہ متعدد اسکیموں کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سال 2021-22ء کے مرکزی بجٹ میں ملک کے ماہی گیری کے شعبے کے لئے 20,000 کروڑ روپے کا التزام کیا گیا ہے ۔ مودی نے کہا کہ ریاستی حکومت کی کاوشوں کی وجہ سے آج ریاست میں 20 انجینئرنگ کالج کھل گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ “ملک میں گیس پائپ لائن نیٹ ورک تیار کیا جارہا ہے ، ملک کے ہر گاؤں میں آپٹیکل فائبر بچھایا جارہا ہے ، ہر گھر تک پانی پہنچانے کے لئے پائپ لائنیںبچھائی جارہی ہیں ۔وزیراعظم نے کہا کہ دریائے برہم پترا کے آشیرواد سے اس خطے کی زمین زرخیز ہے۔ حکومت زرعی آمدنی کو بہتر بنانے، کاشت کاروں کو بہتر بیج مہیا کرانے، سوائل ہیلتھ کارڈس اور پنشن اسکیم متعارف کرانے پر کام کررہی ہے۔ زرعی قوانین میں ترمیم اس مقصد سے کی گئی ہے کہ فصلیں بین الاقوامی منڈیوں تک پہنچنا یقینی ہوجائے۔ وزیراعظم مودی نے کہا کہ وہ آسام اور اسمبلی انتخابات والی دیگر ریاستوں کا زیادہ سے زیادہ دورہ کریں گے تاکہ وہاں ترقیاتی کاموں کو نئی جہت دی جاسکے اور انتخابات کے بہانے عوام کو زیادہ سے زیادہ سہولتیں میسر آجائے۔ پانچ ریاستوں میں اسمبلی انتخابات کا اعلان ہونا باقی ہے جو مارچ کے پہلے ہفتہ میں ممکن ہے۔


اپنی رائے یہاں لکھیں