آر ایس ایس پر فلم اور ویب سیریزجلد، مجھے لگا کہ اس تنظیم نے گاندھی کو مارا ہے:وجیندر پرساد

486

اگر آر ایس ایس نہ ہوتا…تو کشمیر نہ ہوتا….پاکستان میں ضم ہو جاتا…اور پھر لاکھوں ہندو مارے جاتے…یہ بات ہے بلاک بسٹر فلموں باہوبلی اور آر آر آر کے مصنف ایس ایس راجامولی کے والد وجیندر پرساد نے کہی۔ درحقیقت، حال ہی میں پرساد نے وجئے واڑہ میں منعقدہ آر ایس ایس کے قومی ایگزیکٹو ممبر رام مادھو کی کتاب کی ریلیز پروگرام میں شرکت کی تھی۔

پروگرام کے دوران وجیندر پرساد نے آر ایس ایس پر فلم اور ویب سیریز لکھنے کا اعلان کیا انھوں نے کہا کہ ”میں آپ سب کے سامنے کچھ اعتراف کرنا چاہتا ہوں۔ تین چار سال پہلے تک میں آر ایس ایس کے بارے میں زیادہ نہیں جانتا تھا۔

میں سمجھتا تھا کہ آر ایس ایس نے گاندھی کو مارا ہے۔ لیکن جب مجھ سے آر ایس ایس پر فلم لکھنے کو کہا گیا تو میں ناگپور چلا گیا اور موہن بھاگوت سے ملاقات کی۔ میں وہاں ایک دن ٹھہرا اور پہلی بار سمجھا کہ آر ایس ایس کیا ہے۔ مجھے بہت افسوس ہوا کہ اتنی بڑی تنظیم کے بارے میں اتنے عرصے تک نہیں جانتا تھا۔”

ان کا مزید کہنا تھا کہ ’اگر آر ایس ایس نہ ہوتی تو کشمیر نہ ہوتا، یہ پاکستان میں ضم ہوجاتا۔اور پاکستان کی وجہ سے لاکھوں ہندو مارے جاتے ہوں گے۔ وجےندرا پرساد نے مزید کہا، "میں آپ سب کو ایک خوشخبری دینا چاہتا ہوں، میں جلد ہی کام شروع کرنے والا ہوں۔ میں آر ایس ایس پر ایک فلم اور ایک ویب سیریز بنا رہا ہوں۔” انہوں نے کہا، "آر ایس ایس نے غلطی کی ہے۔ عوام کو اپنے بارے میں نہیں بتانا۔ میں اس خلاء کو جتنا ہو سکے پُر کروں گا۔ میں وعدہ کرتا ہوں کہ میں اس بات کو یقینی بناؤں گا کہ ہم سب آر ایس ایس کی عظمت پر فخر کر سکیں۔”