• 425
    Shares

، ممبئی 15 ستمبر (یو این آئی ) ملک کےمختلف گوشوں میں بم دھماکوں اور تخریبی کارروائی کی سازش کے الزام میں گرفتار 6 مشتبہ دہشت گردوں کے ہمراہ ممبئی کا مشتبہ دہشت گرد جان محمد عرف سمیر کالیا کے ملوث ہونے کے بعد مہاراشٹر اے ٹی ایس سمیت پولیس بھی الرٹ ہوگئی.

ممبئی میں اے ٹی ایس دفترمیں منعقدہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مہاراشٹر انسداد دہشت گردی دستہ کے سر براہ ونیت اگروال نے بتایا کہ ممبئی کے دھاراوی جھوپڑپٹی میں مقیم مبینہ دہشت گرد جان محمد شیخ عرف سمیر کالیا کو دلی اسپیشل سیل نے گرفتار کیا ہے لیکن وہ اے ٹی ایس کے زیر نگرانی تھا اور گزشتہ ۲۰ برسوں سے ڈی کمپنی کےلئے کام کرتا تھا اس پر ۲۰۰۹ میں پائیدھونی پولیس اسٹیشن میں فائرنگ کا بھی کیس ہے اس کے ساتھ ہی دھاراوی پولیس اسٹیشن میں بھی مارپیٹ کا مقدمہ درج ہے ملزم کی معاشی حالت ٹھیک نہیں تھی لیکن وہ مسلسل ڈی کمپنی کے رابطے میں تھا اس لئے اے ٹی ایس بھی اس پر نظر رکھ رہی تھی، ۹ ستمبر کو اسے دلی جانا تھا لیکن ٹکٹ نہیں ملی اس کے بعد اس نے ۱۰ کو پیسہ ٹرانفسر کروایا اور ۱۳ کو ویٹنگ لسٹ میں گولڈن ٹیمپل کی ٹکٹ حاصل کی اور پھر یہ کنفرم بھی ہوگئی اسے نظام الدین جانا تھا لیکن پولیس نے اسے کوٹہ راجستھان میں ہی گرفتار کر لیا، اس کارروائی کے بعد اے ٹی ایس کی ٹیم دلی روانہ ہوگئی ہے جہاں ملزم جان محمد سے باز پرس میں شمولیت اختیار کر کے اس سے متعلق مزید تفصیلات حاصل کرےگی ۔

ممبئی میں مقیم ڈی کمپنی اور دائود ابراہیم کے بھائی انیس ابراہیم کا رابطہ کار جان محمد کی گرفتاری کے بعد صحافیوں نے اے ٹی ایس سے سوال کیا کہ ممبئ میں رہنے والے شخص کو دلی اسپیشل سیل گرفتار کر تی ہے اور اے ٹی ایس اس سے لاعلم ہےکیا یہ اے ٹی ایس کی ناکامی کا نتیجہ نہیں ہے تو انہوں نے اس کی تردید کی اور کہا کہ اے ٹی ایس اس پر مسلسل نگرانی کر رہی تھی لیکن اے ٹی ایس کا کیس نہیں تھا جس میں اسے گرفتار کیا گیا ہے وہ دلی کا کیس ہے اس لئے ہم نے ایف آئی آر کاپی طلب کی ہے اس پر ممبئی میں جو بھی کیس درج کئے گئے ہیں اس کی بھی اے ٹی ایس اب مطالعہ کے بعد تفتیش کرےگی ملزم پر فائرنگ کا کیس بھی درج ہے-

، اے ٹی ایس سر براہ نے اس معاملے میں مزیدکچھ بھی کہنے سے انکار کر دیا اور کہا کہ اے ٹی ایس انڈرورلڈ اور دہشت گردوں پر نظر رکھ رہی ہے اور مسلسل کارروائی بھی جاری ہے جبکہ کئی آپریشن خفیہ ہوتے ہیں جسے عام نہیں کیا جاسکتا انھوں نے مزید کہا کہ جان محمد کے اہل خانہ سے بھی اے ٹی ایس نے بات چیت کی ہے لیکن وہ اس کی سر گرمی سے لاعلم تھے نیز جان محمد نے ایک ٹیکسی بھی قرض پر لی تھی لیکن قرض کی ادائیگی نہ کر نے کی صورت میں بینک نے اس کی ٹیکسی ضبط کر لی تھی اب اس نے قرض پر موٹر سائیکل بھی لی تھی وہ ڈرائیونگ بھی کیا کرتا تھا لیکن اس کے باوجو د وہ مالی بدحالی کا شکار تھا۔۔
اے ٹی ایس چیف ونیت اگروال نے بتایا کہ کوٹہ سے جس جان محمدکو ٹرین سے گرفتار کیا گیااس سے پاس سے کسی بھی قسم کا اسلحہ جات برآمد نہیں ہوا ہے وہ دلی جارہا تھا اسی دوران اسے گرفتار کیا گیا ہے اس سے اے ٹی ایس یہ بھی معلوم کر ےگی کہ ممبئی میں اس کا کیا منصوبہ تھا کیونکہ دلی پولیس نے پریس کانفرنس میں اس جانب اشارہ کیا ہے اس لئے اے ٹی ایس یہ بھی معلوم کرے گی کہ ممبئی میں کیا اس نے معائنہ کیا تھا یا پھر یہاں اس کا دہشت گردانہ حملوں کا منصوبہ تھا مہاراشٹر میں جان محمد کو ہی گرفتار کیا گیا ہے اس کے علاوہ اے ٹی ایس اس کے دوست و احباب و دیگر متعلقین سے بھی باز پرس کرےگی اے ٹی ایس نے بتایا کہ اس کے رڈار پر کئی ایسے مشتبہ ملزمین اور ڈی کمپنی کے ارکان ہے جو غیر قانونی سر گرمیوں میں ملوث ہے یا پھر ان پر مجرمانہ ریکارڈ ہے ۔

واضح رہے کہ دلی اسپیشل سیل کی ملک بھر میں تہواروں کے موسم میں تخریبی کارروائی انجام دینے کے الزام میں گرفتار مشتبہ دہشت گردوں کو گرفتار کیا ہے جبکہ مغربی بنگال میں ۱۶ مشتبہ دہشت گردروپوش ہے انہیں پاکستان میں تربیت دی گئی ہے اس میں مزید گرفتاریاں بھی متوقع ہیں-

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔